Saturday, 23 September 2017

پاکستان میں مذہب کے نام پر تشدد کی روک تھام کے لیے اصول

ہم کم از کم اس ایجنڈے پر متفق ہیں

  1. ہم تمام پاکستانی شہریوں کے لیے برابر شہری حقوق اور انسانی حقوق کی حمایت کرتے ہیں۔
  2. ہم تکفیرِعام اور اس کی بنیاد پر ایذا رسانی کی مخالفت کرتے ہیں۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ تکفیرِ عام کو نفرت انگیز مواد کے طور پر لیا جائے ۔
  3. ہم حکومت پاکستان سے اپیل کرتے ہیں  کہ وہ ہر قسم کے نفرت انگیز مواد کے خلاف فوری اقدامات کرے جو مذہبی تعلق کی بناء پر کسی بھی گروہ کے خلاف تشدد پر اکساتا ہو چاہے وہ مواد تحریری ہو  یا بیانات کی شکل میں ہو۔
  4. ہم حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ مذہب کے نام پر یا کسی پر گستاخی کا غلط الزام لگا کر یا کسی بھی بالائے عدالت قتل یا تشدد کے خلاف کاروائی کرے۔ اس ضمن میں ہم قوانین پاکستان میں عموماً اور گستاخی سے متعلق قوانین میں خصوصاً ضروری ترامیم کا مطالبہ کرتے ہیں۔
  5. ہم حکومت اور اداروں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ کسی بھی ایسی مہم کا حصہ نہ بنیں جو عوام کو "گستاخانہ مواد" سے متعلق ڈیجیٹل میڈیا  پر عوام کو گمراہ کرتے ہیں۔  حکومت اور ریاست کو حقیقتاً  اس مسئلے پر آگاہی پیدا کرنے کی کوششوں کو فروغ دے اور راہنمائی کرے۔
  6. ہم قانون کی حکمرانی اور قانونی کاروائی کی حمایت کرتے ہیں۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ مقامی سطح پر جرم اور تشدد سے نپٹنے کے لیے حکومت  قانون نافذ کرنے والے اداروں کا دائرہ کار بڑھائے(جو اکثر دوسری سطحوں تک جاتا ہے)۔
  7. ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ تعلیمی نصاب میں تمام سطحوں پر ایسی تعلیمات متعارف کروائی جائیں جو رحم اور خدا ترسی، برداشت اور انسانی حقوق کے احترام کا درس دیتی ہوں۔ درسی کتب سے ایسا مواد خارج کر دیا جائے جو معاشرے کے کسی طبقہ یا  کسی گروہ کے خلاف نفرت اور/یا تشددکو ابھارتا  یا اس کی تبلیغ کرتا ہے۔
  8. ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت پاکستان مذہب کے نام پر کام کرنے والی کالعدم تنظیموں اور افراد کے خلاف کاروائی کرے۔ حکومت کو فرقہ واریت اور مذہبی تشدد میں ملوث کالعدم تنظیموں کی فہرست  کو عام کیا جائے اور ان کے خلاف  قانونی کاروائی کی جائے۔
  9. ہم پاکستانی برقی ذرائع ابلاغ (Electronic Media) کے قوائد و ضوابط کو اس طرح بہتر بنایا جائے کہ وہ ان ریڈیو اور ٹی وی چینلوں کو مؤثر طور پر سزا دیں جو نفرت انگیز مواد پھیلانے میں مصروف ہیں اور/یا مذہب کے نام پر تشدد کو فروغ دینے والے جواب دہ ابلاغی افراد کو وقت دیتے ہیں۔
  10. ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت فوراً کالعدم تنظیموں، ان کے حامیوں اور متعلقین کے اثاثہ جات  ضبط کیے جائیں اور ان کے علاقائی اور بین الاقوامی مالی تعاون کے ذرائع  کو مستقل طور پر قطع کرنے کے لیے  تمام وسائل بروئے کار لائے۔ حکومت کو ایسی تنظیموں اور افراد پر  سفر وغیرہ کے حوالے سے پابندیاں عائد کرنی چاہی۔